45

پاک فوج کا افغانستان کراس بارڈر سے فائرنگ کے بڑھتے واقعات کا نوٹس

افغانستان میں دہشتگرد گروپ سر اٹھا رہے ہیں، افغان سرزمین کو پاکستان کیخلاف استعمال ہونے سے روکا جائے، علاقائی امن واستحکام کیلئے بارڈر مینجمنٹ ضروری ہے۔ آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ کی زیرصدارت کورکمانڈرز کانفرنس

راولپنڈی (تازہ ترین۔ 25 مئی2021ء) آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ کی زیرصدارت کورکمانڈرز کانفرنس کے شرکاء نے پاک افغان سرحد پرافغان سے فائرنگ کے بڑھتے واقعات کا نوٹس لیا، شرکاء نے کہا کہ افغانستان میں دہشتگرد گروپ سر اٹھا رہے ہیں،افغان سرزمین کو پاکستان کیخلاف استعمال ہونے سے روکا جائے، علاقائی امن واستحکام کیلئے بارڈر مینجمنٹ ضروری ہے،آرمی چیف نے پاک فوج کی آپریشنل تیاریوں پر اظہار اطمینان کیا۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آرکے مطابق چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کی زیرصدارت کورکمانڈرز کانفرنس ہوئی، کانفرنس ملک کو درپیش اندرونی و بیرونی چیلنجز کا جائزہ لیا گیا۔ علاقائی، عالمی اور ملکی  سلامتی کی صورتحال  پر بھی غور کیا گیا۔

کورکمانڈرز کو مستقبل کے چیلنجز سے نمٹنے کیلئے آپریشنل تیاریوں پر بریفنگ دی گئی۔آرمی چیف نے پاک فوج کی آپریشنل تیاریوں پر اظہار اطمینان کیا۔ اجلاس میں ایل او سی، ورکنگ باوَنڈری اور پاک افغان بارڈر کی صورتحال کا جائزہ بھی لیا گیا۔ شرکاء نے علاقائی امن واستحکام کے فروغ کیلئے مکمل تعاون کے عزم کا اعادہ کیا۔ کورکمانڈز کانفرنس نےافغانستان کراس بارڈر سےفائرنگ کے بڑھتے واقعات کا نوٹس لیا۔ شرکاء نے کہا کہ افغانستان میں دہشتگرد گروپ سر اٹھا رہے ہیں،افغان سرزمین کو پاکستان کیخلاف استعمال ہونے سے روکا جائے۔شرکاء علاقائی سکیورٹی صورتحال میں مئوثر بارڈر مینجمنٹ ضروری ہے۔پاکستان نے اپنی جانب بارڈر مینجمنٹ کیلئے مئوثر اقدامات اٹھا رکھے ہیں۔ آرمی چیف  کی کورونا سے نمٹنے کیلئے سول انتظامیہ کے ساتھ تعاون پر فارمیشنز کی تعریف کی۔ فامیشنز کے تعاون سے وباء کا پھیلاؤ روکنے میں مدد ملی۔ شرکاء نےبلوچستان اورخیبر پختونخواہ میں ضم ہونے والے نئے اضلاع میں سیکیورٹی اورسماجی، اقتصادی صورتحال کا بھی جائزہ لیا۔ سماجی اقتصادی ترقی سے امن کو مزید تقویت ملے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں