33

کورونا کے پیش نظر لاہور سمیت صوبہ بھر میں نئی پابندیاں عائد

شام 6 سے سحری تک تمام سرگرمیاں معطل رہیں گی، نئی پابندیوں کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا

لاہور (تازہ ترین- 28 اپریل 2021ء) :کورونا کی بگڑتی ہوئی صورتحال کے پیش نظر صوبائی دارالحکومت لاہور سمیت پنجاب بھرمیں نئی پابندیاں عائد کر دی گئی ہیں۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے احکامات پرلاہور میں لاک ڈاؤن نافذ کر دیا گیا ہے جس کے تحت شام 6 بجے سے صبح سحری تک تمام سرگرمیوں پر مکمل پابندی عائد ہو گی۔اس حوالے سے سیکرٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئرسارہ اسلم نے نوٹی فکیشن بھی جاری کردیا۔ اس نوٹی فکیشن کے تحت لاک ڈاؤن مئی تک نافذ العمل رہےگا۔ صوبہ بھر میں شام 6 بجے سے صبح سحری تک تمام سرگرمیوں پر مکمل پابندی عائد ہو گی۔ صوبہ بھر میں ہفتہ اور اتوار کو مکمل تعطیل ہو گی، تمام کاروبار اور سرگرمیاں بند رہیں گی۔

پٹرول پمپ،میڈیکل سٹورز، ویکسینیشن سینٹر گوشت اور سبزی کی دکانوں کو اس نوٹی فکیشن سےاستشنی حاصل ہو گا۔اس کے علاوہ صوبہ بھر میں انڈورشادیوں اور دیگر تقریبات پر مکمل پابندی عائد ہوگی۔پنجاب کے وہ اضلاع جن میںکورونا وائرس کے مثبت کیسز کی شرح ٪8 سے زیادہ ہے وہاں تمام ان ڈور اور آؤٹ ڈورشادی کی تقریبات، ریسٹورینٹس اور مزارات پرمکمل پابندی عائد ہوگی۔ ان اضلاع میں بہاولپور، بھکر، ڈیرہ غازی خان، فیصل آباد ، گوجرانوالہ،جھنگ، قصور،خانیوال،لاہور، ملتان ، منڈی بہاؤالدین، اوکاڑہ، راولپنڈی، رحیم یار خان،سیالکوٹ، سرگودھا، شیخوپورہ اور وہاڑی کے اضلاع شامل ہیں۔عالمی وباء کورونا وائرس کے سبب پاکستان میں مزید 201 اموات اور 5 ہزار 292 نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے مطابق پاکستان میںکورونا سے اموات کی مجموعی تعداد 17 ہزار 230 تک پہنچ گئی جبکہ متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد 8 لاکھ 10 ہزار 231 ہو گئی ہے۔ ملک بھرمیں ایکٹو کیسز کی تعداد 88 ہزار 207 ہے اور 7 لاکھ 4 ہزار 494 افرادکورونا سے صحتیاب ہوچکے ہیں۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ کورونا کے سبب سب  سے زیادہ اموات پنجاب میں ہوئیں جہاں8 ہزار 224 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں، جبکہ لاہور میںکورونا مثبت کیسز کی شرح 24 فیصد ہوگئی، گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران شہر میںریکارڈ 54 اموات ہوئیں، 1306 نئے مریض رپورٹ ہوئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں